تمہیں کچھ یاد ہے جاناں 11

تمہیں کچھ یاد ہے جاناں happy rainy day

تمہیں کچھ یاد ہے جاناں؟
وہ پچھلی بارشوں میں ہم
بڑے نادان ہوتے تھے۔۔
سب کی آنکھ سے بچ کر
پرانی کاپیوں سے ہم
ورق کچھ نوچ لیتے تھے۔۔
ہم اِک کشتی بناتے تھے۔۔
وہ پانی پر چلاتے تھے۔۔
ہمیں لگتا تھـا جـیسے ہم
اُسـی کشتی میں بـیٹھے ہیں۔۔
وہ کشتی پار جاتی تھی
تو ہـم بھی پار جـاتے تھے۔۔
وہ کشتی ڈوب جاتی تھی
تو ہـم بھی ڈوب جاتے تھے۔۔
چـلو گزرے ہوئـے کل کے
وہ پـل پھر ڈھـونـڈ لاتے ہیں۔۔
پرانی کـاپیـاں لے کر۔۔
نئـی کشتـی بناتـے ہیں۔۔
وہ پانی پر چلاتے ہیں۔۔
چـلو پِھـر پـار جاتےہیں۔۔
چـلو پِھـر ڈوب جـاتـے ہیں۔۔!!

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں