INDONISHIA 46

انڈونیشیا میں ایک ہفتے کے دوران تیسرا بڑا زلزلہ، ہلاکتوں کی تعداد 347 ہوگئی

جکارتہ : انڈونیشیا کے جزیرے لومبوک میں آج صبح پھر شدید نوعیت کا زلزلہ محسوس کیا گیا، زلزلوں کے نتیجے میں اب تک 347 افراد جاں بحق جبکہ سیکڑوں زخمی ہوچکے ہیں۔
Lombok-Feature

تفصیلات کے مطابق انڈونیشیا کے سیاحتی جزیرے لومبوک میں زلزلے کے نتیجے میں جاں بحق ہونے والے افراد کی تعداد 347 ہوگئی ہے جبکہ زلزلے کے نتیجے میں متعدد عمارتوں کو نقصان پہنچا ہے اور سینکڑوں افراد زخمی ہیں۔
Lombok-Post-01
غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ آج صبح پھر انڈونیشا کے سیاحتی جزیرے لومبوک کے شمال مغربی حصّے میں زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے گئے ہیں۔ جس کی شدت ریکٹر اسکیل پر 6 اعشاریہ 2 ریکارڈ کی گئی ہے جبکہ اس کی گہرائی 12 کلومیٹر زیرِ زمین تھی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ ایک ہفتے کے دوران یہ تیسرا بڑا زلزلہ ہے، لومبوک میں آنے والے زلزلوں کے نتیجے میں ہزاروں گھر منہدم جبکہ کئی ہزار افراد گھروں سے محروم ہوگئے ہیں۔
Lombok-Post-02
انڈونیشین میڈیا کا کہنا تھا کہ زلزلے کے جھٹکے لومبوک سے متصل سیاحت کے لیے معروف جزیرے بالی میں بھی محسوس کیے گئے جہاں لوگ خوبصورت ساحل سمندر اور ہائیکنگ کے لیے دنیا بھر سے آتے ہیں۔

یاد ہے کہ روان ماہ 6 اگست کو بھی انڈونیشیا کے جزیرے لومبوک میں زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے گئے تھے جس کے نتیجے میں کم ازکم 91 افراد جاں بحق جبکہ متعدد افراد زخمی ہوگئے۔ امریکی جیولوجیکل سروے کے مطابق زلزلے کی شدت ریکٹراسکیل پر7 اعشیاریہ صفرریکارڈ کی گئی جبکہ اس کی گہرائی 10 کلومیٹرزیرزمین تھی۔
Lombok-Post-03
انڈونیشیا کے جزیرے لومبوک میں ایک ہفتے قبل ہی 6 اعشاریہ 4 شدت کا زلزلہ آیا تھا جس میں 17 افراد جاں بحق اور سیکڑوں عمارتیں تباہ ہوگئی تھیں۔

مزید پڑھیں: میکسیکو: اڑان بھرنے کے 5 منٹ بعد ہی طیارہ گر کر تباہ، 85 افراد زخمی

یاد رہے کہ دسمبر2016 میں انڈونیشیا کے صوبے آچے میں آنے والے 5۔6 شدت کے زلزلے میں 100 افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔

واضح رہے کہ انڈونیشیا بحرالکاہل کے ایک ایسے حصے میں واقعہ ہے جہاں زلزلے آنے اور آتش فشاں پہاڑ پھٹنے کے واقعات عموماً رونما ہوتے رہتے ہیں اوردنیا بھر کے تقریباً آدھے آتش فشاں اسی حصّے میں پائے جاتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں