jurwan-couple- 48

جڑواں بہنوں کی جڑواں بھائیوں سے شادی، پیدا ہونے والے بچوں کا آپس میں کیا رشتہ ہوگا؟

لندن: برطانیہ کے جینیاتی ماہر نے سائنسی بنیادوں کو مدنظر رکھتے ہوئے کہا ہے کہ دو جڑواں بہنوں کی جڑواں بھائیوں سے ہونے والی شادی کے بعد پیدا ہونے والے بچے آپس میں کزن نہیں بلکہ بہن بھائی ہوں گے۔
jurwan-couple-1

تفصیلات کے مطابق برطانوی دارالحکومت لندن میں گزشتہ ہفتے دو جڑواں بہنوں کی جڑواں بھائیوں سے شادی ہوئی، انوکھی تقریب نے میڈیا میں خوب پزیرائی حاصل کی۔

برطانیہ کے طبی ماہر نے شادی کے حوالے سے ایک بات کہہ کر سب کو ورطہ حیرت میں مبتلا کردیا۔ اُن کا کہنا تھا کہ جب جڑواں جوڑے کے ہاں بچوں کی پیدائش ہوگی تو آپس میں جینیاتی لحاظ سے کزن نہیں بلکہ بہن بھائی ہوں گے۔
سائنسی ماہر کا کہنا تھا کہ عام بہن بھائیوں کا ڈی این اے تقریباً 50 فیصد مماثلث رکھتا ہے تاہم جڑواں بچوں کا ڈین این اے 100 فیصد بالکل ایک جیسا ہوتا ہے۔

مزید پڑھیں: ڈپریشن کی وہ علامات جو کوئی نہیں جانتا

اُن کا کہنا تھا کہ جڑواں بھائیوں جاش سلیئر اور جرمی سلیئر کا سگی بہنوں بڑنی ڈین اور برینا ڈین کے ساتھ ازدواجی بندھن میں بندھنا انوکھا واقعہ ہے اور اس کے نتائج بھی منفرد ہی ہوں گے۔

سائنسی ماہر کا کہنا تھا کہ چونکہ جڑواں بھائیوں اور ایک ساتھ پیدا ہونے والے دو بچوں کا ڈی این اے 100 فیصد ایک جیسا ہوتا ہے اس لیے ان کے گھر پیدا ہونے والے بچوں کا ڈی این اے 50 فیصد ملتا جلتا ہوں جیسا سگے بہن بھائیوں کا ہوتا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ ڈی این اے کا نصف فیصد ملنے کا مطلب یہ ہے کہ کزن ہونے کے باوجود سائنسی اعتبار سے آپس میں بہن بھائی ہوں گے۔ اُن کا یہ بھی کہنا تھا کہ یہ رشتہ محض سائنسی بنیادوں پر ہوگا البتہ حقیقی طور پر یہ آپس میں کزن اور ان کے والدین بچوں کے چچا ، خالہ ہی ہوں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں