college 47

پرائیویٹ یونیورسٹیز اور کالجز بند کرنے کا حکم

لاہور (اردو پیپر) چیف جسٹس ثاقب نثار نے پنجاب بھر کی پرائیویٹ یونیورسٹیز کیخلاف ازخود نوٹس کیس کی سماعت کی. جس میں حکومت پنجاب کو حکم دیا ہے کہ پرائیویٹ یونیورسٹیز کے حوالے سے کمیٹی تشکیل دی جائے.

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس کی سربراہی میں 2 رکنی بنچ نے سماعت کی.عدالت میں ڈائریکٹر ایف آئی اے ڈاکٹر وقارعباسی، ایڈووکیٹ جنرل احمد اویس پیش ہوئے. چیف جسٹس نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ معیار پر پورا نہ اترنے والی یونیورسٹیز، کالجز کو بند کردیا جائے. چیف جسٹس نے سرگودھا یونیورسٹی کے وائس چانسلر کو فوری پیش ہونے کا حکم دیا ہے. انہوں نے اس حوالے سے ڈائریکٹر ایف آئی اے کو ہدایت جاری کی کہ وہ سرگودھا یونیورسٹی کے وائس چانسلر کو فوری پیش کریں.

ضرورپڑھیں: سابق وزیراعظم پر فرد جرم کب عائد کی جائے گی؟ تاریخ کا اعلان کر دیا گیا

سماعت کے دوران سابق وائس چانسلر پنجاب یونیورسٹی ڈاکٹر مجاہد کامران اور چیف جسٹس میں دلچسپ مکالمہ بھی ہوا. چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ ڈاکٹر صاحب آپ کس سلسلے میں یہاں آئے ہیں؟ جس پر ڈاکٹر مجاہد نے جواب دیا کہ میں یونیورسٹی آف لاہور میں کام کررہا ہوں. چیف جسٹس نے کہا کہ آپ کو چاہیے کہ اس عمر میں مفت لیکچر دیں اور کتابیں لکھیں، یہاں آپ کیا لینے آ گئے ہیں؟

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں