short poems about life 12

  تم فقط ایک بات کہتے ہو / short poems about life

جب بھی ہم ضبط آزماتے ہیں

 لفظ پلکوں پہ بھیگ جاتے ہیں

  بات اتنی بڑی نہیں ہوتی

 لوگ جتنی بڑی بناتے ہیں

 دل سے دل جب نہیں ملانا ہو

 لوگ پھر ہاتھ کیوں ملاتے ہیں

  شاعری پیکروں میں ڈھلتی ہے

 وہ مرے شعر گنگناتے ہیں

  اس نے لکھا ہے آخری خط میں

 فاصلے پیار کو بڑھاتے ہیں

 ہم سے پاگل بہت ہیں دنیا میں

 آزمودہ کو آزماتے ہیں

  تم فقط ایک بات کہتے ہو

 لوگ وعدوں کو بھول جاتے ہیں..

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں