talal 75

ہمیں کافر بنا دیا گیا، فتوے لگائے گئے، اس سے بڑھ کر کیا توہین عدالت ہوگی؟ چیف جسٹس نے طلال چوہدری کیس کا فیصلہ سنا دیا

اسلام آباد (اردو پیپر) چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا ہے کہ ہم پر کفر کا فتویٰ لگایا گیا. اس سے بڑھ کر کیا توہین عدالت ہو سکتی ہے، ہمیں تو کافر بنا دیا گیا. سپریم کورٹ نے مسلم لیگ ن کے رہنما طلال چوہردی کی انٹرا کورٹ اپیل مسترد کردی.

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں مسلم لیگ ن کے رہنما اور سابق وزیر مملکت طلال چوہدری کی انٹرا کورٹ اپیل کی سماعت ہوئی. جسٹس عمر عطا نے ریمارکس دیئے کہ طلال چوہدری کو اپنے بیان پر ندامت کا اظہار کرنا چاہیے. 5 سال تک سیاست سے باہر رہنا معقول سزا ہے. چیف جسٹس نے کہا کہ طلال چوہدری پہلے ق لیگ کے پیچھے تھے اب میاں صاحب کے ساتھ ہیں. انھوں نے وکیل سے استفسار کیا کہ آپ نے کتنے مقدمات لڑے؟ اس پر وکیل کامران مرتضیٰ نے کہا اعظم نذیر تارڑ کے ساتھ مقدمات ہوتے رہے ہیں. چیف جسٹس نے کہا اعظم نذیر کو بھی نوٹس کردیتے ہیں. مجھے بھی کہا گیا کہ برادری کا ہے، معاف کر دیں. کیا فیصلے برادری کی بنیادوں پر ہوں گے؟.

طلال چوہدری کے وکیل نے عدالت سے درخواست کی کہ مجھے کوئی اور تاریخ دے دیں. مسلم لیگ ن کے رہنما کے چیف جسٹس کے بنچ میں بیٹھنے پر اعتراض پر چیف جسٹس نے کہا، کیا آپ چاہتے ہیں میں بنچ میں نہ بیٹھوں؟ ہم آپ کے اس اعتراض کو مسترد کرتے ہیں. وکیل کامران مرتضیٰ نے کہا آپ اپنا ذہن دے چکے ہیں. چیف جسٹس نے کہا میں نے اپنا ذہن دے دیا ہو گا، ہم تعصب کے اعتراض کو اوورول کرتے ہیں. چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ عدالت نے کون سے الفاظ استعمال کیے جن سے ہتک متاثر ہوئی؟ وکیل کامران مرتضیٰ نے کہا کہ میرے موکل نے تمہید کیلئے بات کی، میں نے شروع بھی معافی سے کیا اور اختتام بھی معافی پر کرتا ہوں. جسٹس ثاقب نثار نے کہا ہم پر کفر کا فتویٰ لگایا گیا. اس سے بڑھ کر کیا توہین عدالت ہو سکتی ہے؟ ہمیں تو کافر بنا دیا گیا. انھوں نے کہا کہ سزا میں اضافے کی اپیل نہ کرنا اٹارنی جنرل آفس کی نااہلی ہے. عدالت نے اپیل مسترد کردی.

ضرورپڑھیں:وزیراعظم ہاؤسنگ سکیم: وہ کونسے خوشنصیب ہیں جو پہلے مرحلے میں اپنا گھر حاصل کر سکیں گے؟ خبر نے دھوم مچا دی

واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے طلال چوہدری کو توہین عدالت کا مرتکب قرار دے دیا تھا جس کے بعد وہ 5سال کے لیے نااہل ہوگئے تھے۔ جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے طلال چوہدری کے خلاف توہین عدالت کیس کا فیصلہ سنایا تھا اور انہیں عدالت برخاست ہونے تک قید کی سزا اور ایک لاکھ روپے جرمانے کی سزا بھی دی گئی تھی۔ طلال چوہدری 5 سال کے لیے نہ صرف الیکشن لڑنے کے لیے نااہل ہوئے تھے بلکہ وہ کسی بھی عوامی عہدے کے لیے بھی نااہل قرار پائے تھے۔

کیٹاگری میں : نام

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں