imf 97

حکومت قرضہ لینے کےلئے تیار، لیکن آئی ایم ایف کی جانب سے ایسی شرائط رکھ دی گئیں کہ حکومت سر پکڑ کر بیٹھ گئی

اسلام آباد (اردو پیپر)حکومت کا آئی ایم ایف کے پاس جانے کا فیصلہ کر لیا ہے. وزیر خزانہ نے آئی ایم ایف کے پاس جانے کا فیصلہ عمران خان کے مشورے کے بعد کیا ہے. لیکن آئی ایم ایف نے بھی حکومت کے آگے بھاری شرائط رکھ دی ہیں. قرض کے لئے شرائط پر عمل اقدامات ضروری ہیں.

ضرور پڑھیں: اوورسیز پاکستانیوں کو ووٹ کا حق دینے کا معاملہ کھٹائی میں پڑ گیا کیونکہ… خواجہ سعد رفیق قیامت خیز چال چل گئے

تفصیلات کے مطابق ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومت نے آئی ایم ایف کے پاس جانے کا فیصلہ ہی کیا تھا کہ آئی ایم ایف کی جانب سے بھاری شرط عائد کردی گئی ہیں. جس کے باعث حکومت سوچنے پر مجبور ہوگئی ہے، ذرائع کا کہنا ہے کہ آئی ایم ایف نے موقف اپنایا کہ ہم حکومت کو قرضے دینے کے لئے تیار ہیں لیکن حکومت کو بھی ہماری شرائط ماننا پڑیں گی.

یاد رہے کہ اسد عمر کی جانب سے کچھ دیر پہلے یہ فیصلہ کیا گیا تھا کہ وہ آئی ایم ایف سے قرضے لینے کے لئے آئی ایم ایف کی خدمات حاصل کریں گے.

آئی ایم ایف کی جانب سے کی جانے والی شرائط درج ذیل ہیں

1)بجلی و گیس کی قیمتوں میں اضافہ کیا جائے گا،

2)روپے کی قیمت میں کمی اور ڈالر کی قیمت میں اضافہ کیا جائے.

3)ڈالر کی قیمت میں 15 روپے تک کا اضافہ کیا جائے.

4)ڈالر کی قیمت 150 روپے تک کی جائے

5)غیر ضروری سبسڈی کو مکمل ختم کیا جائے،

6)بجلی کی قیمت میں 4 روپے فی یونٹ فوری اضافہ کیا جائے.

7)بجلی کی فی یونٹ قیمت 21 روپے مقرر کی جائے

8)گورننس اور معاشی صورتحال کو بہتر کیا جائے

9)آئی ایم ایف سے لیا گیا قرض گردی قرضوں کی مد میں ادا نہیں کیا جائے گا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں