US 44

امریکہ نے ایران کو مشرق وسطیٰ کے لیے خطرناک قرار دے دیا

واشنگٹن: امریکی محکمہ خارجہ کی ترجمان ہیدر نوئرٹ نے کہا ہے کہ ایران آج بھی مشرقی وسطیٰ میں عدم تعاون پھیلا رہا ہے، اسے اپنے رویے میں تبدیلی لانا ہوگی۔
US-featured-5-750x369

ان خیالات کا اظہار انہوں نے واشنگٹن میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا، ہیدر نوئرٹ کا کہنا تھا کہ ایران کو چاہیے کہ وہ اپنے رویے کو فوری طور پر تبدیل کرے، ایسے اقدامات سے ایران کو مزید سخت نتائج کا سامنا کرنا پڑے گا۔

انہوں نے کہا کہ ایران اپنا مال سماجی خدمات پر خرچ کرنے کے بجائے دہشت گرد حملوں کے لیے استعمال میں لا رہا ہے، ایرانی حکام کو اپنے عوام کی کوئی پرواہ نہیں ہے۔

ترجمان امریکی وزارت خارجہ کا کہنا تھا کہ امریکا ایک ایسا معاہدہ چاہتا ہے جو صرف جوہری پروگرام سے متعلق نہ ہو بلکہ تہران کا برتاؤ اور اس کا بیلسٹک میزائل پروگرام بھی اُس میں شامل ہو۔

ڈونلڈ‌ ٹرمپ نے ایران پر اقتصادی پابندیاں‌ عائد کردیں
ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم ایرانی حکمراں نظام کے برتاؤ میں تبدیلی دیکھنا چاہتے ہیں، اُن کو چاہیے کہ اپنے عوام پر توجہ دیں اور اپنا دہشت گردی کی فنڈنگ میں نہیں بلکہ اپنے عوام پر خرچ کریں۔

مزید پڑھیں:کینیڈا کا سعودی عرب سے معافی مانگنے سے انکار

خیال رہے کہ دو روز قبل امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایگزیکٹو آرڈر پر دستخط کیے تھے، جس کے بعد مختلف شعبے پر پابندیوں کا اطلاق ہوچکا ہے، جبکہ 5 نومبر کو توانائی اور تیل کی صنعتوں پر پابندیاں لگائی جائیں گی۔

واضح رہے کہ 2015 میں امریکی صدر بارک اوباما اور ایرانی حکومت کے درمیان جوہری معاہدہ ہوا تھا جس کے سبب ایران پر سے معاشی پابندیاں ختم کردی گئی تھیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں