cricket-spotfixing 38

سپاٹ فکسنگ میں کون کسنے کھلاڑی ملوث تھے؟ الجزیرہ ٹی وی کی رپورٹ نے تہلکہ مچا دیا

لاہور(اردو پیپر) پاکستان اور آسٹریلیا کے کرکٹر سپاٹ فکسنگ میں ملوث ہیں۔

قطری ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سپاٹ فکسنگ کے واقعات 2011 اور 2012کے درمیان ہوئے ،رپورٹ کے مطابق انگلش کھلاڑیوں نے مبینہ طورپر7میچوں میں سپاٹ فکسنگ کی، آسٹریلوی کھلاڑیوں نے 5 اور پاکستانی کھلاڑیوں نے 3 میچوں میں مبینہ طورپرسپاٹ فکسنگ کی، 15 میچز میں سپاٹ فکسنگ کے 26 واقعات ہوئے، فکسنگ کے واقعات 6 ٹیسٹ، 6 ون ڈے اور3 ٹی ٹونٹی میچز میں ہوئے۔
الجزیرہ ٹی وی نے اپنی رپورٹ میں دستاویزی ثبوت حاصل کرنے کا بھی دعویٰ کیا ہے کہ 12 -2011 کے دوران 15 انٹرنیشنل میچز میں اسپاٹ فکسنگ کی گئی، پاکستان اورانگلینڈ کے درمیان 2001 اور 2012 میں متحدہ عرب امارات میں کھیلی جانے والی 3 ٹیسٹ میچز کی سیریزمیں بھی مبینہ طور پر سپاٹ فکسنگ کی گئی، الجزیرہ ٹی وی نے دعویٰ کیا ہے کہ ساﺅتھ افریقہ اورآسٹریلیا، آسٹریلیا اورانڈیا کا میچ، اور پاکستان کا آسٹریلیا کیسا تھ ورلڈٹی ٹونٹی جوسری لنکا میں کھیلا گیا تھا اس میں پاکستان اورساﺅتھ افریقہ کی ٹیموں کے درمیان جو میچ کھیلا گیا تھا اس کا بھی تزکرہ کیا گیا ہے۔
انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے بھی فوری طورپر اس پر اپنے ردعمل کا بھی اظہارکیاہے ان کا کہنا ہے کہ وہ پہلے ہی ایک عرب ٹی وی کی جو رپورٹ آئی تھی اس کا سامنے رکھ کر تحقیقات کر رہے ہیں،نہ صرف اس رپورٹ میں آنے والے واقعات بلکہ ان کے علاوہ بھی جتنے واقعات سامنے آئے ان کی وسیع پیمانے پر تحقیقات کر رہے ہیں،اورانہوں نے ایک بار پھر عرب ٹی وی سے کہا ہے کہ اگر ان کے پاس دستاویزی یا ویڈیو مواد ہے توہمارے ساتھ شیئرکریں تاکہ تحقیقات کو مزید آگے بڑھایا جاسکے.
آئی سی سی کی گورننگ باڈی کرکٹ میں کرپشن کے حوالے سے زیرو ٹالرنس رکھتی ہے ،عرب ٹی وی کی رپورٹ میں پاکستانی کرکٹرعمراکمل کا بھی نام آیاہے، رپورٹ کے مطابق سپاٹ فکسنگ کے تانے بانے بھارتی بکی انیل منورسے ملتے ہیں،عرب میڈیا نے اس حوالے سے ایک ڈاکومینٹری بھی جاری کردی، ویڈیواورتصاویرمیں پاکستانی کرکٹرعمراکمل، بھارتی کرکٹ ٹیم کے کپتان ویرات، روہت شرما، بالاجی، سریش رائنا اور آسٹریلوی کرکٹراینڈی بکل بھی نظرآرہے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق تین میچز میں پاکستانی کرکٹر سپاٹ فکسنگ میں شامل تھے ،7میچزمیں انگلینڈ کے کرکٹرز سپاٹ فکسنگ میں ملوث تھے، 5 میچزمیں آسٹریلوی کرکٹرکے علاوہ دیگرممالک کے کھلاڑی سپاٹ فکسنگ میں شامل تھے ،میں آسٹریلیابمقابلہ انگلینڈون ڈے میچ میں سپاٹ فکسنگ کی گئی،ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ 2012، انگلینڈ بمقابلہ افغانستان میں سپاٹ فکسنگ کی گئی، بھارت اورانگلینڈکے لارڈز میں ہونے میچ میں سپاٹ فکسنگ ہوئی، جنوبی افریقہ اورآسٹریلیا کے درمیان کیپ ٹاﺅن کے میچ میں سپاٹ فکسنگ ہوئی، پاکستان اورانگلینڈ کی یواے ای میں کھیلی جانے والی سیریزمیں سپاٹ فکسنگ ہوئی، رپورٹ کے مطابق آئی سی سی بھارتی بکی انیل منور کو 8 سال سے مانیٹرکررہی ہے۔ انیل منور2010 سے میچ فکسنگ میں ملوث ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں